انتساب

ضروری وضاحت

تقریظ۔۱

تقریظ۔۲

تقریظ۔۳

نگاہ اوّلین

حمد باری تعالیٰ

نعت بحضور سرورِ کونین صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم

حرفِ آغاز،پ۔۱

پ۔۲

پ۔۳

وجہ تالیف

مقدمہ

’’یا رسول اللہ‘‘ اک وسیلہ ہے

’’یا رسول اللہ‘‘ ذکر رسول ہے

’’یا رسول اللہ‘‘ با وفا امتی ہونے کی علامت

’’یا رسول اللہ‘‘ ندایہ کلمہ ہے،پ۔۱

پ۔۲

 ’’یا رسول اللہ‘‘  حکمِ الٰہی کی تعمیل ہے،پ۔۱

پ۔۲

 ’’یا رسول اللہ‘‘  کلمہ مستعان ہے

’’یا رسول اللہ‘‘ لفظ فاروق ہے، ’’یا رسول اللہ‘‘ ایک دعا ہے

’’یا رسول اللہ‘‘ حرفِ طلب ہے

’’یا رسول اللہ‘‘ میں سلام پنہاں ہے، ’’یا رسول اللہ‘‘  کیا ہے

رسولِ اکرم صلی اللہ علیہ وسلم قبل از پیدائش وسیلہ

حیات ظاہری میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے توسل

بعد از وصال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے توسل،پ۔۱

پ۔۲

پ۔۳

پ۔۴

پ۔۵

پ۔۶

پ۔۷

پ۔۸

نبی پاک صلی اللہ علیہ وسلم کو ندا کرنا سنتِ الٰہیہ ہے، دلیل نمبر ۱۔۳

دلیل نمبر ۴۔۸

دلیل نمبر ۹۔۱۲

دلیل نمبر۱۳

رسولِ اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کا حکم، دلیل نمبر۱۴، یارسول اللہ کہنا  سنتِ صحابہ کرام ہے، دلیل نمبر۱۵۔۱۸

دلیل نمبر ۱۹۔۲۳

دلیل نمبر۲۴۔۲۸

دلیل نمبر۲۹۔۳۴

دلیل نمبر۳۵۔۳۷

دلیل نمبر۳۸۔۴۳

آقا علیہ السلام  کو لفظ  ’’یا‘‘سے پکارنا  سنتِ انبیاء کرام علیہم السلام  ہے، دلیل نمبر۴۴۔۴۶، بروزِ محشر کعبۃ اللہ کی پکار، دلیل نمبر۴۷، جانور کی پکار، دلیل نمبر۴۸

شجر و حجر کی پکار، دلیل نمبر۴۹۔۵۱

دلیل نمبر۵۲۔۵۶

دلیل نمبر۵۷۔۶۱

دلیل نمبر۶۲۔۶۴

مخالفین کے اکابر علماء کرام حضرات سے ندائے یا رسول اللہ کا ثبوت، دلیل نمبر۶۵۔۶۹

دلیل نمبر۷۰۔۷۵

دلیل نمبر۷۶۔۷۹

دلیل نمبر۸۰۔۸۲

ضروری وضاحت،پ۔۱

پ۔۲